جنرل پرویزمشرف(پروفیسر محمد عقیل)


پاکستان کی سیاسی تاریخ فوجی حکمرانوں کے غلبہ سے بھری ہوئی ہے۔جنرل ایوب خان،جنرل یحیٰ خان اورضیاء الحق وہ جرنیل ہیں جنہوں نے پاکستانی سیاست پرانمٹ نقوش مرتب کیے۔ان میں سے ہرجرنل نے اپنے اقتدارکولامتناہی طول دینے کی کوشش کی اورہرایک نے منہ کی کھائی۔اگران کے اقتدارکے ایام کا جائزہ لیا جائے توانہیں لگتاہی نہیں تھاکہ یہ بھی اقتدارسے بے دخل کردیے جائیں گے۔ان کی کارسے بھی کبھی جھنڈااتر جائے گا۔اوریہ بھی مسندِ اقتدار سے راندۂ درگاہ ہوجائیں گے۔ان سب نے ماضی کے ڈکٹیٹر وں کاانجام دیکھاہواتھا۔لیکن سب یہی سمجھتے تھے کہ یہ سب کچھ ہمارے ساتھ نہیں ہوگا۔
آج جنرل پرویزمشرف بھی اسی مقام پرآچکے ہیں۔صاف نظر آرہا ہے کہ جنرل صاحب کے اقتدار کا سورج نصف النہار تک پہنچنے کے بعد غروب کی منزل کی طرف گامزن ہے۔لیکن جنرل صاحب کے رویہ سے لگتاہے کہ وہ آخری وقت تک اپنے سینئیرز (seniors)کے نقش قدم پرچلیں گے۔انکااطمینان دبے لفظوں میںیہ کہہ رہاہے کہ جوکچھ بھی پرانے جرنیلوں کے ساتھ ہواوہ میرے ساتھ نہیں ہوگا،میں تو ایک اسپیشل کیس( special case ) ہوں،میں زیادہ ذہین، زیادہ قابل اورطاقتورترہوں اور میں اس انجام تک نہیں پہنچوں گا۔
آج عملی زندگی میں ہم میں سے ہرشخص جنرل مشرف کی طرح خوش فہمی کاشکارہے۔ہرشخص یہ سمجھتاہے کہ دوسرے لوگ مررہے ہیں لیکن ابھی اس کی موت دورہے حالانکہ موت عمرنہیں دیکھتی، ہرشخص یہ سمجھتاہے کہ جہنم اگرہے بھی تواس کے لیے نہیں البتہ اس کے سوا ہرشخص جہنم میں ڈالاجاسکتاہے۔ہرشخص یہ سمجھتا ہے کہ اس کے عظیم ترین گناہ پربھی خدااسے معاف کردے گاجبکہ وہ دوسروں کومعمولی گناہ پرخداکی وعیدسناتارہتاہے۔آج کاانسان مادی چیزوں کی خواہش کوبراتوسمجھتا ہے لیکن دوسروں کے لیے۔اپنے لیے وہ مادیت کوخداکادرجہ دے چکا۔وہ یہ سمجھتاہے کہ محض کلمہ پڑھ کرچھوٹ جائے گاجبکہ دوسروں سے عمل صالح کامطالبہ بھی کرتا ہے۔
غرض یہ کہ وہ خودکوایک مستثنیٰ فرد( special case)سمجھتاہے جس کے لیے ساری رعایتیں،ساری چھوٹ اورساری اچھائیاں لکھ دی گئی ہیں جبکہ اس کے علاوہ باقی دنیا کے ساتھ خدامیرٹ پرمعاملہ کرے گا۔ وہ ماضی کی تبا ہ شدہ قوموں سے کوئی سبق نہیں لیتا جو اپنے زعم میں خدا کی چہیتی تھیں لیکن پھر بھی برباد ہوگئیں۔اس شخص کی مثال جنرل مشرف جیسی ہے جویہ سمجھے کہ باقی جرنیل تومارے گئے لیکن میں اپنے اقتدارکودوام بخش دوں گالیکن ایک دن جنرل مشرف کی کارسے جھنڈااترجائے گا۔بالکل ایسے ہی ایک دن ہماری زندگی سے بھی خوش فہمی کاجھنڈااترجائے گا۔پھرسامنے خداہوگاجوفوراًہی حساب چکادے گا۔

تبصرہ کیجئے

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s