نظر اندازخدا .پروفیسر محمد عقیل


’’ بہت کم ظرف ہیں آپ لوگ‘‘۔ اچانک پرنسپل صاحب کی آواز کانفرنس ہال میں گونجی۔’’ اتنی محنت سے میں نے اس کانفرنس ہال کی تزین و آرائش کی لیکن کسی نے آنکھ اٹھا کر بھی نہ دیکھا‘‘۔ پرنسپل صاحب کی شکایت پر تمام اسٹاف نے انکی کاوش پر انہیں مبارک باد دینا شروع کردی۔کوئی رنگ و روغن کی تعریف کرہا تھا تو کوئی کارپٹ کے قصیدوں میں مگن تھا۔
اچانک میرے ذہن میں ایک خیال وارد ہوا۔ خدا نے بھی اتنی بڑی کائنات تنہا تخلیق کی۔ آسمان کو وسعتیں دے کر اس میں طرح طرح کے پرندے اڑائے ، زمین کو ہموار کرکے حیوانات دوڑائے،مٹی کو نرم کرکے نباتات اگائے، پاتال میں حشرات سمو ئے،سمندر کے عمیق گڑھوں کو پانی سے بھر کے اس میں آبی مخلوق پیدا کی ، پہاڑوں کو کھڑا کرکے معدنیات چھپادیں۔لیکن کوئی اسکی خلاقی کی داد نہیں دیتا، کوئی اسکی مصوری کو نہیں سراہتا۔، کوئی نہیں کائنات کی گنگناہٹ کا نغمہ سنے،کوئی نہیں جو آسمان سے جاری ہونے والی نشریات کو دیکھے۔
آج ٹی وی پر کئی چینل ان فطرت کے مناظر کونشر کرہے ہیں لیکن خدا کو مائنس کرکے، آج کائنات کے ہر ہر پہلوپر تحقیقی مقالے لکھے جارہے ہیں لیکن احسن الخالقین کو نظر انداز کرکے۔ لگتا ہے کہ لوگوں نے خدا کو کائنات سے بے دخل کردیا، اسے اسی کی بنائی ہوئی دنیا سے نکال دیا۔
کوئی ہے جو اس سانحے پر ماتم کرے، اس حادثے پر نوحے لکھے ،اس غم میں رت جگے کرے،اس پر صدائے احتجاج بلند کرے؟
لیکن وہ رحمٰن و رحیم خدا سب کچھ خاموشی سے دیکھ رہا ہے۔زمین اور آسمان کی ہر شے اسکی تعریف بیان کررہی ، اس کی تسبیح پڑھ رہی ،اس کے گن گارہی اور اسکی خلاقی پرمحو رقص ہے۔آج خدااس نظر انداز ہونے پر بھی انسان کو مہلت دے رہا ہے کہ شاید یہ ناعاقبت اندیش انسان لوٹ آئے اپنے رب کی جانب، اپنے محسن کی جانب، اپنے معبود کی جانب ،حقیقی بادشاہ کی جانب۔
آج جن انسانوں کی دنیا میں خدا کی جگہ نہیں کل خدا کی دنیا میں بھی انکی جگہ نہیں ہوگی۔
اللہ اکبر اللہ اکبر لاالہ ٰ الااللہ واللہ اکبر اللہ اکبر وللہ الحمد

تبصرہ کیجئے

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s