قذافی اور بادشاہ حقیقی


آخر کار 20اکتوبر2011بروز جمعرات لیبیا کے حکمران معمر قذافی کو ہلاک کردیا گیا۔جون 1942میں پیدا ہونے والے قذافی کی عمر موت کے وقت 69برس تھی۔ ان میں سے 42برس وہ لیبیا کے بلا شرکت غیرے حکمران رہے۔جمہوریت کو تو چھوڑیے کہ جس میں بیشتر ملکو ں میں حکمران 5برسوں میں بدل جاتے ہیں، قدیم بادشاہت میں بھی چند ہی مثالیں ملتی ہیں جب کوئی شخص 40برس سے زائد عرصے تک مسند اقتدار پر فائز رہا ہو۔
انسانی خواہشات کی اگر کوئی فہرست ترتیب دی جائے تو اس میں سب سے بنیادی خواہش زندگی کی ہوگی اور سب سے بڑی خواہش اقتدار کی۔ زندگی اور اقتدار کوئی نہیں چھوڑنا چاہتا۔ مگر المیہ یہ ہے کہ انسان کو ایک روز یہ دونوں چیزیں مجبوراً چھوڑنی پڑتی ہیں۔ چاہے انسان کی زندگی 69 سال کی ہو یا اس کا اقتدار 42برسوں پر محیط ہو جائے۔
اس کائنات میں صرف ایک ہستی ہے جس کی زندگی کو موت کا اندیشہ نہیں اور جس کے اقتدار کو کسی بغاوت اور تبدیلی کا خوف نہیں۔وہ اللہ پروردگار عالم ہے۔۔۔معبود برحق۔۔۔بادشاہی حقیقی۔وہ زندہ ہے اور اس کا اقتدار ہمیشہ رہے گا۔جس انسان کو اس بات کا یقین ہوجائے وہ قذافی جیسے لوگوں سے لے کر ایک عام انسان کی موت کی خبر سن کر بے اختیار سجدے میں گرجائے۔ وہ رو روکر کہے گا کہ پروردگار یہ صرف تیری ذات ہے جسے موت نہیں۔ یہ صرف تیرا اقتدار ہے جسے زوال نہیں۔پروردگار کو یہ سجدہ اتنا محبوب ہوتا ہے کہ اس کے جواب میں وہ ایک فانی اور عاجز انسان کو ہمیشہ کی زندگی اور جنت کا نہ ختم ہونے والا اقتدنار دے دیتا ہے۔
کتنا کمزور ہے یہ عاجز انسان جو زندگی اور اقتدار کی خواہش کے باوجود ان سے محروم ہوجاتا ہے۔ کتنا کریم ہے وہ ر ب جو ایک سجدے کے عوض یہ سب کچھ اسے عطا کردیتا ہے۔
تحریر: ریحان احمد یوسفی

One response to this post.

  1. May Allah Almighty bless u 4 this wonderful n brief article concerning the Powers n Authority of Allah Almighty with that of His creation that is humans. How much Allah Almighty loves us humans 4 a single prostration when the humans with the belief n sincerity that Allah Almighty alone is the all Omnipotent n ever living. May the people also have firm believe in Allah Almighty by getting success in this world n the hereafter.

    جواب دیں

تبصرہ کیجئے

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s