احتساب غیر


بچپن میں ہم جس محلے میں رہتے تھے وہاں ایک خاندان آباد تھا۔اتفاق کی بات ہے کہ اس خاندان کے بیشتر بچے تتلاہٹ کا شکار تھے ۔ تاہم اس کے ساتھ وہ اتنے پراعتماد اورتیز و طرار تھے کہ پورے محلے کے بچوں بڑ وں کا ناطقہ بند کیے رکھتے تھے ۔ ایک دفعہ اس خاندان کا ایک بچہ مجھ سے کہنے لگا کہ یار آج کل لوگوں کو انگلش بھی سمجھ میں نہیں آتی۔پھر خود ہی اپنی بات کی وضاحت کرتے ہوئے کہنے لگا کہ ہم ایک دکان پر گئے ۔ وہاں ہم نے کہا کہ ’’انی‘‘ دے دو ، مگر وہ سمجھا ہی نہیں ۔کئی دفعہ اس کو سمجھایا لیکن اس بے وقوف کے سمجھ میں ہی نہیں آیا ۔آخر کار اسے اردو میں بتانا پڑ ا کہ شہد دے دو ۔تب کہیں جا کر وہ سمجھا۔ یہ واقعہ بچپن سے میری یادداشت کا حصہ ہے ۔اس لیے کہ جب وہ ہنی کو اپنی تتلاہٹ کی بنا پر ’’انی‘‘ کہہ رہا تھا تو اس کے بار بار دہرانے کے باوجودمجھے بھی سمجھ میں نہیں آیا تھا کہ وہ کیا کہنا چاہتا ہے ۔ یہ واقعہ مجھے ہر اس موقعے پر یاد آ جاتا ہے جب کوئی شخص اپنی تمام تر کمزوریوں اور کوتاہیوں کو یکسر فراموش کر کے تکبر کو پہنچے ہوئے اعتماد کے ساتھ دوسروں پر الزام تراشی شروع کر دیتا ہے ۔

اپنی خطاؤں اور کوتاہیوں کو بھول کر دوسروں کو ہدف الزام و بہتان کا نشانہ بنالینا، اپنی جہالت اور گمراہی کو نظر انداز کر کے پورے اعتماد سے دوسروں پر گمراہی کا فتویٰ دینا، اپنے کردار اوراخلاق کی کمزوریوں کو بھول کر دوسرے کی ان کمزوریوں کو اچھالنا جو حقیقت میں موجود ہی نہیں ہوتیں ؛ یہ وہ رویے ہیں جو معاشرے کا ناسور بن چکے ہیں ۔ خود کو بھول کر دوسروں کا احتساب کرنا اس دنیا کا سب سے آسان کام ہے ۔مگر یہی وہ رویہ ہے جو قیامت کے دن انسان کی انتہائی سخت گرفت اور پرسش کا باعث بن جائے گا۔ اس لیے کہ یہ رویہ تکبر کا عکاس ہے اور تکبر اللہ تعالیٰ کبھی معاف نہیں کرتے

(By ریحان احمد یوسفی)

One response to this post.

  1. May Allah bless you. By reading this wonderful article I see that I have been doing the same without ever realizing what I have been doing until now by reading your article that Allah will never forgive me. So from today Inshallah I will try my best not to criticize anyone but to always see the positive aspect in him.

    جواب دیں

تبصرہ کیجئے

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s