آسانی کی نعمت

سورہ بقرہ میں یہود اور حضرت موسٰی علیہ السلام کا سبق آموز مکالمہ درج ہوا ہے۔ جب موسٰی علیہ السلام نے بنی اسرائیل سے کہا کہ اللہ تمہیں ایک گاٗئے ذبح کرنے کا حکم دیتا ہے تو بنی اسرائیل نے جواب دیا ” کیا آپ ہم سے مذاق کررہے ہیں؟”۔ حضرت موسی نے کہا کہ میں پناہ مانگتا ہوں اللہ کی کہ اس سیدی ہ معاملے میں تم سے مذاق کروں۔ بنی اسرائیل چونکہ مصر میں قیام کے دوران گائے کے تقدس کے قائل ہوچکے تھے اس لئے انہوں نے تفصیلات پوچھناشروع کردیں کہ وہ کیسی گاٗئے ہو؟ اس کا رنگ کیا ہو ؟ اس کی عمر کتنی ہو وغیرہ۔ لیکن وہ جتنا پوچھتے گئے اتنا ہی پھنستے گئے۔ اور بالآخر وہ جس گائے کو ذبح کرنے سے بچنا چاہتے تھے اسی کو قربانی کرنے پر مجبور ہوگئے۔
اگر غور سے دیکھا جاٗئے تو بنی اسرائیل حکم کی ابتدا میں کسی بھی گاٗئے کو ذبح کردیتے تو اس حکم پر عمل درآمد کا فریضہ اداہوجاتا لیکن وہ اس سادہ اور مجمل بات پر قانع نہیں رہے اور اپنے لئے مشکلات کھڑی کرتے چلے گئے۔
دین میں یہ اجمال اور سادگی ایک نعمت ہے لیکن جو لوگ دین کے مزاج سے ناواقف ہوتے ہیں وہ اپنے اور دوسروں کے لئے مشکلات کھڑی کرتے رہتے ہیں۔ ہم مسلمانوں میں بھی بے شمار معاملات ایسے ہیں جو دین میں مجمل اور آسان بیان ہوئے ہیں لیکن لوگوں کی بے جا کھوج کی وجہ سے ان پر عمل درآمد مشکل تر ہوجارہا ہے۔ مثال کے طور پر نماز کو لے لیجئے۔ نماز میں نبی کریم ﷺ سے رفع یدین کرنا اور نہ کرنا دونوں ثابت ہیں چنانچہ رفع یدین کو لازم سمجھنا یا اس کے ترک کو ضروری جاننا ایک عبث بحث ہے۔ اسی طرح نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم سے داڑھی کا رکھنا سنت معلوم ہوتا ہے لیکن داڑھی کی مقدار اور لمبائی مقرر کرنا ایک سادہ چیز کو مشکل بنانے کے مترادف ہے۔ اسی طرح اسلام میں خواتین کے پردے کا حکم موجود ہے لیکن اس کی تفصیلات میں اختلاف ہے کہ برقع پہن کر پردہ کیا جائے یا ایک چادر ہی کافی ہے۔چنانچہ اسے متعین کرنے کی کوشش کرنا بھی اسی قبیل کی ایک بحث ہے۔
اس طرح کی بے شمار مثالیں ہیں جن میں شارع نے دین کے احکامات کوآسان، سادہ اور مجمل رکھا ہے۔ اس سادگی میں پیچیدگی پید ا کرنا اور غیر ضروری طور پر سوالات کرنا شارع کی منشا کے خلاف ہے۔ اس سے نا صرف موجودہ بلکہ آئندہ آنے والی نسلوں کو غیر ضروری طور پر مشقت اور پریشانی کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔
ایک حدیث میں ابوہریرہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم سے راوی ہیں کہ آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا دین بہت آسان ہے اور جو شخص دین میں سختی کرے گا وہ اس پر غالب آجائے گا، پس تم لوگ میانہ روی کرو اور (اعتدال سے) قریب رہو اور خوش ہو جاؤ (کہ تمہیں ایسا دین ملا) اور صبح اور دوپہر کے بعد اور کچھ رات میں عبادت کرنے سے دینی قوت حاصل کرو۔( صحیح بخاری:جلد اول:حدیث نمبر 38)
از پروفیسر محمد عقیل

Advertisements

4 responses to this post.

  1. Posted by احمر on 30/04/2012 at 1:51 شام


    بہت سکریہ،
    آج اس قسم کی تحریروں کی بہت ضرورت ہے، کہ کچھ لوگ سوال درسوال کر کے اپنےآپ کو الجھاے چلے جا رہےہیں۔

    ایک نظر اس واقعہ پر بھی ڈالیں جس کے راوی بی بی سی کے وسعت اللہ خان ہیں

    لیکن سات برس کے وقفے سے لندن میں پرانے دوستوں اور ان کے اہل ِ خانہ سے مل کر احساس ہوا کہ سماجی و نفسیاتی بے یقینی کے خلا کو دیگر بقائی مباحثوں کے ساتھ ساتھ حلال و حرام کی بحث نے بھی شدت سے لپیٹ میں لے لیا ہے۔ جیسے ایک صاحب نے اپنی صاحبزادی کے اصرار پر بہترین لیدر صوفہ اس لئے بیچ دیا کیونکہ صاحبزادی کو ایک دن شبہہ ہوگیا کہ اس کا چمڑا حلال نہیں۔ اسے یہ دلیل بھی قائل نا کرسکی کہ یہ چمڑا گائے کا ہے۔ صاحبزادی کا استدلال تھا کہ کیا ثبوت ہے کہ یہ مری ہوئی گائے کا چمڑا ہے یا زبیحہ گائے کا۔

    جواب

  2. اسلام علیکم! ورڈپریس نے تھیمز کا اردو ترجمعہ کرنے کا منصوبہ تیار کیا ہے۔ اور مجھے اردو زبان میں ویلیڈیٹر مقرر کیا گیا ہے۔ اس منصوبے کے تحت اردو بلاگز کے لئے تھیمز کا باقاعدہ اردو ترجمعہ کیا جائےگا۔ اس منصوبے کی تکمیل کےلئے ہمیں اردو زبان پر عبور رکھنے والے وولنٹئیرز کی ضرورت ہے جو انگریزی تھیمز کا اردو میں ترجمعہ کر سکیں۔ اگر آپ اس میں دلچسپی رکھتے ہیں تو ابھی سے اس لنک پر سے کام شروع کر دیں۔Twenty eleven theme تا کہ آپ کا بلاگ صرف اردو طرز خط کی بجائے بہتر اور باقاعدہ طور پر اردو زبان میں ہو

    اس کے علاوہ اگر آپ ورڈپریس اردو فورم کی ضرورت محسوس کرتے ہیں تو یہاں اپنی رائے کا اظہار کریں۔ ورڈپریس انگلش فورمشکریہ۔

    جواب

  3. Posted by گمنام on 30/04/2012 at 9:47 صبح

    اسلام علیکم! ورڈپریس نے تھیمز کا اردو ترجمعہ کرنے کا منصوبہ تیار کیا ہے۔ اور مجھے اردو زبان میں ویلیڈیٹر مقرر کیا گیا ہے۔ اس منصوبے کے تحت اردو بلاگز کے لئے تھیمز کا باقاعدہ اردو ترجمعہ کیا جائےگا۔ اس منصوبے کی تکمیل کےلئے ہمیں اردو زبان پر عبور رکھنے والے وولنٹئیرز کی ضرورت ہے جو انگریزی تھیمز کا اردو میں ترجمعہ کر سکیں۔ اگر آپ اس میں دلچسپی رکھتے ہیں تو ابھی سے اس لنک پر سے کام شروع کر دیں۔Twenty eleven theme تا کہ آپ کا بلاگ صرف اردو طرز خط کی بجائے بہتر اور باقاعدہ طور پر اردو زبان میں ہو

    اس کے علاوہ اگر آپ ورڈپریس اردو فورم کی ضرورت محسوس کرتے ہیں تو یہاں اپنی رائے کا اظہار کریں۔ ورڈپریس انگلش فورمشکریہ۔

    جواب

  4. May Allah bless you. What a wonderful n enjoyable article you have written. May Allah keep on giving you courage to go on writing such articles so that the public becomes aware n to practice Islam in an easy way.

    جواب

تبصرہ کیجئے

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s