مثبت ا و ر منفی

"مثبت و منفی عمل کیا ہے؟ “
کسی نے دریافت کیا۔ پھر مخاطب کی جانب سے جواب نہ ملنے پر اس نے خود ہی بیان کرنا شروع کردیا ۔
” مثبت ” کا مطلب ہے جمع کرنا، اضافہ کرنا یا بڑھانا ۔ دوسری جانب ” منفی ” کا مطلب کم کرنا یاگھٹانا”۔
یہ ایک حقیقت ہے۔مثبت عمل سے مراد ہر وہ کام ہے جس سے ترقی ہو، بلندی کی جانب پیش قدمی ہو، منزل کا حصول ہو، بہتری ہو، فلاح و بہبود ہو ، تعمیر ہو۔ اس کے برعکس منفی عمل سے مراد ہر وہ فعل ہے جس میں حقیقی نقصان ہو، تنزلی ہو، منزل سے دوری ہو، تخریب ہو۔ مختصر الفاظ میں مثبت عمل وہ ہے جس کا نتیجہ تعمیری ہو اور منفی کام وہ ہے جس کا انجام تخریبی ہو۔
اچھا گمان ، لوگوں سے ہمدردی و محبت، مشکلات میں ڈٹ جانا، مصیبتوں پر صبر، صحت کی حفاظت، لوگوں کو معاف کرنا، سچ بولنا، سخاوت، وفاداری، احسان شناسی وغیرہ مثبت رویوں کی مثالیں ہیں۔ دوسر ی جانب بدگمانی، نفرت، بلاجواز تنقید، غیبت، بغض و کینہ، پست ہمتی و مایوسی،بے صبری، غصہ سے مغلوب ہوجانا، بخل ، ریاکاری، خود غرضی وغیرہ منفی رویوں کی مثالیں ہیں۔
ان واضح مثالوں کے علاوہ کچھ معاملات ایسے ہوتے ہیں کہ بظاہر وہ مثبت یا منفی محسوس ہوتے ہیں لیکن وہ اپنے انجام کے اعتبار سے برعکس ہوتے ہیں۔مثال کے طور پر ایک شخص سگریٹ پیتا ہے جس سے اسے وقتی لذت اور سکون ملتا ہے ۔ لیکن یہ عمل اپنے انجام کے اعتبار سے منفی ہے کیونکہ اس کا نتیجہ صحت کی تباہی اور بیماری کی صورت میں نکلتا ہے۔ اسی طرح ایک طالب علم ہے جو رات کو جاگ کر امتحان کی تیاری کرتا ہے ۔ بظاہر تو نیند کر برباد کرنا ایک تخریبی عمل ہے لیکن یہ ایک مثبت کام ہے کیونکہ اس کا انجام مسقتبل کی بہتری کی صورت میں نکلتا ہے۔
مثبت اور منفی عمل ہماری سوچ پر منحصر ہوتا ہے۔ ایک منفی سوچ کا حامل شخص منفی عمل کو جنم دیتا جبکہ مثبت فکر کا حامل تعمیری فعل انجام دیتا ہے۔مثال کے طور پر ایک شخص دوسروں کو برا سمجھتا اور ان کے خلاف بدگمانی اور نفرت رکھتا ہے۔ممکن ہے کہ وہ ان مخالفین کے خلاف موقع ملتے ہی انتقامی کاروائی کر بیٹھے ۔ اگر نہیں تو وہ خود کو انتقام کی آگ میں جلا کر اذیت ہی دیتا رہے ۔ دوسری جانب مثبت سوچ کی مثال ہے جو مثبت عمل کو جنم دیتی ہے۔ فرض کریں کہ ایک شخص کو یہ یقین ہے کہ وہ مقابلہ جیت لے گا۔ چنانچہ وہ محنت کرتا ہے ۔ نتیجے کے طور پر کامیابی اس کے قدموں تلے ہوتی ہے۔
مثبت طرز فکر وعمل کا انجام کامیابی اور منفی کا انجام ناکامی ہے خواہ اس کا تعلق دنیا سے ہو یا آخرت سے ہو۔ دنیاوی زندگی میں مثبت طرز حیات اعلیٰ اخلاقی کردار کو تخلیق کرتا، منزل تک رسائی آسان بناتا، مال میں برکت لاتا، اولاد کو صالح بناتا، شریک حیات کو اعتماد و سکون دیتا، دوستوں کو خوش رکھتا، ماں باپ کی خدمت کرواتا ، اعلیٰ صحت و معیار زندگی فراہم کرتا اور مادی فلاح و بہبود کا باعث بنتا ہے۔ یہی اثباتی رویہ دینی زندگی میں رب سے اچھے گمان رکھواتا، اس پر ایمان مضبوط کرتا، اس پر بھروسے کے لشکر تیار کرتا، آخرت کی تیاری کے لئے تازہ دم کرتا اور بالآخر جنت کی بستیوں میں ایک ٹھکانہ میسر کردیتا ہے۔
دوسری جانب منفی طرز زندگی ہے ۔ دنیا میں یہ منفیت انسان کو ذہنی مریض بناتی، مایوسی پیدا کرتی، صحت برباد کرتی ، رزق میں بے برکتی لاتی، حسد و جلن کے الاؤ جلاتی، نفرتوں کے جنگل اگاتی، بھائی کو بھائی سے جدا کرتی اور رشتوں میں تفریق کراتی ہے۔ دینی امور میں یہی منفی طرز حیات انسان کو اپنے رب سے بدگمان کرتا، اسے بغاوت پر اکساتا، تکبر کی دعوت دیتا، عبادت سے برگشتہ کرتا اور مایوسی کی بنا پر کفر کی جانب لے جاتا ہے۔
مثبت طرز پیغمبروں کی سنت جبکہ منفی طرز شیطان کا فعل ہے۔ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی زندگی مثبت طرز حیات کی بہترین مثال ہے۔ آپ نے اپنے بدترین مخالفین کے بارے میں کوئی منفی سوچ پیدا نہیں کی، ان سے اپنی ذات کے لئے جھگڑا نہیں کیا بلکہ جب وہ سب مخالفین شکست کھاگئے تو انہیں معاف کردیا۔ آپ نے ۱۳ سالہ مکی زندگی میں انتہائی کٹھن وقت گذارا لیکن آپ نے کبھی اپنے رب سے شکوہ نہیں کیا اور نہ ہی امید کا دامن ہاتھ سے چھوڑا یہاں تک کہ ہجرت کے موقع پر غار حرا کی تاریکیوں میں بھی اپنے رب پر مکمل بھروسہ رکھا۔
تاریخ گواہ ہے کہ خدا کے پیغمبر سرخرو رہے اور شیطان ناکام و نامراد ہوا۔ آنے والی تاریخ بھی گواہ رہے گی کہ مثبتیت کامیاب اور منفیت ناکام رہے گی کہ خواہ وہ دنیا ہو یا آخرت۔
پروفیسر محمد عقیل
aqilkhans@gmail.com
https://aqilkhans.wordpress.com

Advertisements

One response to this post.

  1. Posted by Asad Qureshi on 03/10/2012 at 4:41 شام

    Very true picture of positivity and negativity llah bless us with more of such lnowledge and practice this too . jazakallah mashaAllah. MayA

    جواب

تبصرہ کیجئے

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s