اسراف ورکشاپ


کیس اسٹڈی
عزیزہ ایک مالدار گھرانے سے تعلق رکھتی تھی جبکہ فرحانہ ایک متوسط طبقے کی لڑکی تھی ۔دونوں ایک دوسرے کی گہری دوست تھیں۔ایک دن عزیزہ اپنی دوست فرحانہ کے ساتھ کپڑے خریدنے کے لئے بازا رگئی۔جس دوکان میں وہ دونوں داخل ہوئے وہ شہر کی ایک مشہور برانڈ ڈ شاپ تھی۔ فرحانہ نے عزیزہ پر اعتراض کیا کہ وہ کیوں اتنی مہنگی جگہ سے کپڑے خرید رہی ہے جبکہ اسکی آدھی قیمت پر یہی ملبوسات کسی اور شاپ سے بھی مل سکتے ہیں ۔عزیزہ نے کہا کہ اگر وہ برانڈڈ کپڑے نہیں خریدے گی تو تقریب میں سب لوگ اس کا مذاق اڑائیں گے۔
"لیکن مہندی ، مایوں ، بارات اور ولیمہ کی تقریبوں کے لئے الگ الگ سوٹ بنانے کی کیا ضرورت ہے؟ یہ تو اسراف ہے۔” فرحانہ نے پھر اعتراض کیا۔
"اگر میں الگ الگ ڈریس نہ بناؤں تو لوگ کیا کہیں گے”۔عزیزہ نے ٹکا سا جواب دے کر اسے خاموش کردیا۔چنانچہ فرحانہ نے بھی عزیزہ کی دیکھا دیکھی اپنی نند کی شادی میں پہننے کے لئے برانڈڈ شاپ سے کپڑے خریدنے کا فیصلہ کرلیا۔
اسراف پر سوال و جواب
سوال نمبر ا۔کیا عزیزہ کا برانڈڈ شاپ سے کپڑے خریدنا اسراف کے زمرے میں آتا ہے؟
جواب:نہیں کیونکہ یہ عزیزہ کی حیثیت کے مطابق اس کی ضرورت ہے۔
سوال نمبر ۲۔کیا فرحانہ کا یہ اعتراض کہ عزیزہ کا ہر تقریب کے لئے الگ الگ کپڑے خریدنا اسراف ہے ، درست تھا؟
جواب۔ نہیں کیونکہ یہ سوسائٹی کے طرز زندگی کے مطابق ایک ضرورت بن گئی ہے گوکہ یہ ضرورت اپنی جگہ ایک غلط فیشن ہے۔
سوال نمبر۳ ۔ کیا فرحانہ کا برانڈڈ شاپ سے کپڑے لینا اسراف ہے؟
جواب۔ ہاں کیونکہ برانڈڈ کپڑے لینا ایک مڈل کلاس لڑکی کی ضرورت نہیں۔
سوال نمبر ۴۔ اسلم کی آمدنی بیس ہزار روپے ماہانہ جبکہ اکرم کی اسی ہزار روپے ماہانہ ہے دونوں نے پندرہ پندرہ ہزار والے موبائل سیٹ خرید رکھے ہیں۔ کیا انکی یہ خرید اسراف ہے؟
جواب۔ اسلم کی خرید اسراف ہے اس لئے کہ اتنا مہنگا موبائیل سیٹ اس کی ضرورت نہیں جبکہ اکرم کے لئے یہ اسراف نہیں کیونکہ یہ سیٹ اس کی آمدنی کے مطابق ہے۔
سوال نمبر ۵۔ الیاس کا تعلق ایک امیر گھرانے سے ہے۔ وہ اپنی بیٹی کی شادی ایک فائیو اسٹار ہوٹل میں کرتا ہے۔ کیا یہ اسراف ہے۔
جواب : نہیں
سوال نمبر ۶۔کیا پیزا کھانا اسراف ہے؟
جواب : امیروں کے لئے نہیں جبکہ غریبوں کے لئے ہے۔لیکن روز ہی کھانے کی عادت بنالی جائے تو امیروں کے لئے بھی یہ اسراف بن جاتا ہے۔
سوال نمبر ۷۔ خواتین کا ہر تقریب کے لئے الگ الگ سوٹ بنانا کیا اسراف ہے؟
جواب: اگر یہ رسم سوسائٹی میں رائج ضرورت ہے تو اسراف نہیں ہے۔ لیکن سوسائٹی کا یہ تقاضا بذات خود غلط معلوم ہوتا ہے۔
سوال نمبر ۸۔ دو امیر دوست ڈنر پر جاتے اور تین ہزار کا کھانا کھاتے ہیں۔ اگر وہ ایک اوسط درجے کا کھانا جو پانچ سو میں آسکتا تھا کھاتے تو ڈھائی ہزار روپے سے کسی کی مدد کرسکتے تھے۔ کیا انکا یہ کھانا اسراف ہے؟
جواب۔ یہ سوال اسراف سے متعلق نہیں بلکہ انفاق سے متعلق ہے۔ یعنی اگر ایک ضرورت مند سامنے آجائے تو زائد رقم کو اس مستحق پر خرچ کرنا بعض صورتوں میں لازم اور بعض میں آپشنل ہوتا ہے۔
سوال نمبر ۹۔رمضان میں نت نئے کھانے اور فروٹ استعمال کرنااسراف ہے؟
جواب۔ اگر یہ اپنی حیثیت کے مطابق ہے تو اسراف نہیں۔

تحریر: پروفیسر محمد عقیل
نوٹ: اسراف کی نوعیت اور تفصیل جاننے کے لئے ” اسراف ” نامی مضمون کا مطالعہ کریں۔
aqilkhans@gmail.com
https://aqilkhans.wordpress.com

Advertisements

4 responses to this post.

  1. ايک بات رہ گئی ۔ اگر آدمی اللہ کے فرمودات پر چلے تو مالی حيثيت ميں اتنا بڑا فرق نہيں رہ سکتا اور مسلمان کيلئے سوسائٹی اللہ کے بندوں کی ہے ۔ ہاں يہ بات ضرور ہے کہ بُخل سے بھی منع کيا گيا ہے کيونکہ اپنا جسم بھی اللہ کی امانت ہے اور اس کا مناسب خيال رکھنا ضروری ہے

    جواب دیں

  2. ميرامشاہدہ ہے کہ "ميرے کپڑے کوئی ديکھ رہا ہے ۔ کيا کہے گا” صرف ايک نفسياتی کمزوری ہے ۔ جب ميں افسر بنا تو ميں نے لنڈے سے ايک کوٹ خريدا ۔ جو کوئی پوچھتا کہاں سے ليا ہے ؟ تو ميں کہہ ديتا لنڈے سے ۔ بعد ميں مجھے معلوم ہوا کہ ساتھی افسر ميرے دوستوں سے پوچھتے رہے کہ دکان بتاؤ اجمل لنڈا کہہ کر ٹالتا ہے ۔ ميرے خيال ميں عزت يا بڑھائی انسان کے اپنے اوصاف ميں ہوتی ہے ۔ ہاں لباس ہميشہ صاف ستھرا اور ڈھنگ کا پہننا چاہيئے

    جواب دیں

  3. آپ کی تحریر سے عموماً متفق ہوں ،لیکن اس تحریر سے نہیں۔۔یہ طبقاتی فرق کو فروغ دینے والی بات ہے۔
    یہی کچھ اگر کسی مالدار ملک ہو تو قابل قبول ایسے مالدار ملک میں جس کے اسی فیصد لوگ خوشحال ہوں۔
    ہمارے پاکستان میں وسائل کا غلط اور بیہودہ استعمال ہے۔

    جواب دیں

  4. Spending of money in excess depends on how much an individual is earning. May Allah bless you,

    جواب دیں

تبصرہ کیجئے

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: