سورہ اخلاص کا خلاصہ


بسم اللہ الرحمٰن الرحیم
سورہ اخلاص کا خلاصہ
ڈاکٹر محمد عقیل
پتھروں میں خدا تلاش کرنے والوں کو بتادو، بزرگوں کو معبودبنانے والوں کو سمجھادو، خدا کا بیٹا اور بیٹی ٹہرانے والوں کو جتادو ، عالم اسباب کو خدا سمجھنے والوں میں اعلان کردو کہ اللہ تو یکتا و یگانہ ہے۔ اس جیسی کوئی مثال ہی

نہیں ۔وہ ان سب باتوں سے بے نیاز ہے کہ اس کو بیوی کی حاجت ہو، اس کا کوئی بیٹا یا بیٹی ہو ، وہ کسی کا باپ بنے، وہ اپنے اختیارات پتھروں کو سونپ دے یا وہ اپنی قدرت بزرگوں میں بانٹ کر خود بے طاقت ہوکر بیٹھ جائے۔
پس اے مسیح کو خدا کا بیٹا بنانے والو سن لو، اس کی کوئی اولاد نہیں ۔ اے خدا کے خالق کا پتا پوچھنے والو جان لو، وہ تو ہمیشہ سے ہے تو اس کی کوئی ابتدا نہیں ۔پس وہ کسی کی اولاد بھی نہیں۔ یہ تمام پتھروں کے پتلے، عقیدت کے بت، چاند، ستارے، سورج ، انسان، فرشتے اور جنات سب اسی کی مخلوق ہیں۔ کوئی مخلوق کس طرح خالق کے ہم پلہ ہوسکتی ہے؟ تو خدارا اپنے ا ن خودساختہ مٹی کے بتوں کو توڑ دو، قبروں سے مانگنا چھوڑ دو، من پسند سفارشی پر بھروسہ ختم کرو، اسباب و علل کو خدا سمجھنا ترک کرو۔ کیونکہ وہ قدرت میں تنہا ہے،دینے میں یکتا ہے،خبرگیری میں یگانہ ہے ، اسباب سے ماورا و رمنفرد ہے اور اپنی ذات و صفات میں سب سے جد ا ہے۔

Advertisements

تبصرہ کیجئے

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s